1857 की अनकही हैरत अंगेज़ दास्तानें (Hindi) 1857 ankahi hairat angez dastanein

Contents/ विषय-क्रम: भूमिका / 1857: स्वतंत्रता संग्राम के सच / अंग्रेज़ों ने दिल्ली कैसे जीती / 1857 के विद्रोह में महिलाओं की हिस्सेदारी / 1857 में हिंदू-मुसलमान-सिख एकजुटता / 1857 के ग़द्दार राजे-रजवाड़े जिन्होंने आज़ाद हिंदुस्तान में भी राज किया / 1857: अंग्रेज़ों द्वारा लूट के आंखों-देखे वृतान्त / दिल्ली की धन-दौलत / एक सैनिक कहावत / जीत के इनाम (लूट) की जगह / भत्ता / लूट जमा करने के लिए एजेंटों की नियुक्ति / शुरुआती लूट / अंतरात्मा की परीक्षा / लुभावना प्रदर्शन / सुनियोजित तलाशी / दौलत की एक खदान / लालच / एक शुभ विचार / छुपाने की पसंदीदा जगहें / मेरे साथ एक दुर्घटना / क़ीमती ख़ज़ाने की खोज / ख़ुशगवार यादें / लूट के सामान की बिक्री / लखनऊ की लूट / तस्वीरें
250.00
Quick View
Add to cart

Be-gunah Qaidi (Urdu)

Dahshatgardi ke jhootey muqadmaat mein phasaaye gaye Muslim nau jawanon ki daastaan بے گناہ قیدی : دہشت گردی کے جھوٹے

400.00
Quick View
Add to cart

Begunah Qaidi बेगुनाह क़ैदी (हिन्दी) (Hindi)

Aatankwaad ke jhootey muqaddmon mein phasaaye gaye Muslim nau jawanon ki daastaan बेगुनाह क़ैदी:  आतंकवाद के झूठे मुक़द्दमों में फंसाये

300.00
Quick View
Add to cart

Brahminists Bombed, Muslims Hanged

Contents:  Introduction / 1. Brahminists’ reverse swing / Ajmer Sharif blast: first case to be reinvestigated / Mecca Masjid (Hyderabad) blast of 2007 / Samjhauta Express blast 2007 / Malegaon blast 2006 / 2. False cases and wrong investigation — IB, the main culprit for falsely implicating Muslims / 3. Vital clues pointing towards Brahminist elements left unpursued / 4. In many cases, innocent Muslims walked free after languishing in jail for years / 5. Mumbai suburban train serial blast case, 11 July 2006 (7/11) Scientific evidence of CDRs discarded; oral evidence of dubious witnesses accepted / 6. German Bakery (Pune) blast 2010 / 7. Investigation of huge haul of arms and explosives (Aurangabad) 2006 / 8. Dilsukhnagar (Hyderabad) bomb blast, 2013 / 9. Mohammadia Masjid, Parbhani bomb blast case / 10. Acquittal in Mecca Masjid blast case / 11. Pleading guilty without a fight / 12. Faraskhana (Dagduseth Ganapati) blast 2014 / 13. Supreme Court missed the chance to end real terrorism

375.00
Quick View
Add to cart

Conspiracy to Kill Rajiv Gandhi: From the CBI files

By K Ragothaman
Former Chief Investigator of the CBI
Did Intelligence Bureau director MK Narayanan tamper with evidence of Rajiv’s assassination? Buy a copy of ‘Conspiracy to Kill Rajiv Gandhi: From the CBI Files’

The gruesome assassination of former Prime Minister of India Rajiv Gandhi on 21st May, 1991 was meticulously planned and flawlessly executed by hardcore cadres of LTTE. It was an unique and first of its kind murder plan wherein a human bomb, that too a lady, was used, killing not only Rajiv Gandhi, nine police officers and six other persons, but also causing grievous injury to more than fifty persons

595.00
Quick View
Read more

Framed, Damned, Acquitted: 24 cases show how Special Cell of Delhi Police manufactures terrorists

This revised edition analyses 24 cases to show how the Special Cell of Delhi Police manufactures terror threats and terrorists.

A report on “investigations” carried out by the Special Cell of Delhi Police.

By Jamia Teachers’ Solidarity Association (JTSA)

303 pages p/b
Year: 2015 (Second Edition)

200.00
Quick View
Read more

Godse’s Children: Hindutva Terror in India

The book ably documents evidence of saffron terror. — A.G. Noorani in Frontline

Hindutva terror has finally emerged. It was on 6 April, 2006 when Nanded witnessed a bomb blast at the house of Laxman Rajkondwar, a longtime RSS activist, killing his son and another Sangh activist. The blast brought to the fore the systematic manner in which people associated with RSS and allied outfits were engaged in making and storing explosives, imparting arms training and planning to bomb minorities as part of their mission to establish Hindu Rashtra in India. Five years later, investigating agencies are in the know of the involvement of Hindutva supremacists in dozens of earlier and later blasts like Malegaon and Samjhauta Express. The role of international linkages and networks of different Hindutva formations in collecting funds, mobilising resources and supporting the cause has added further ferocity to this project. The present book, the first comprehensive treatment of the subject, shows that Hindutva terror is not a mere regional or rare phenomenon. Apart from bringing forth the commonality of tactics used by these terror modules, the book also looks at the phenomenon historically and presents hitherto unexplored evidence. It also underlines the Himalayan task which awaits the investigating agencies as they are yet to nab any of the masterminds, planners, financiers and ideologues of these terror attacks despite ample evidence.

495.00
Quick View
Add to cart

Gujarat Behind The Curtain (revised edition)

A top police officer, who saw Modi Govt in Gujarat from close quarters, raises the curtains. A must read to understand the man who is now our PM.

AG Noorani wrote in Frontline: An important addition to the documentation of the 2002 pogrom. The book deserves a wide readership.

300.00
Quick View
Add to cart

Gujarat Files (Hindi) गुजरात फ़ाइल्स लीपापोती का परदाफ़ाश

Hindi Edition of Gujarat Files:Anatomy of a Cover Up is a book about the 2002 Gujarat riots authored by journalist Rana Ayyub. The book is dedicated to Shahid Azmi along with advocate and activist Mukul Sinha.

295.00
Quick View
Add to cart

Gujarat Files: Anatomy of a Cover Up

English Edition of Gujarat Files:Anatomy of a Cover Up is a book about the 2002 Gujarat riots authored by journalist Rana Ayyub. The book is dedicated to Shahid Azmi along with advocate and activist Mukul Sinha.

350.00
Quick View
Add to cart

Innocent Prisoners (Begunah Qaidi)

Stories of Muslim youth falsely implicated in 7/11 Mumbai train blasts and other terror cases

“Structured by a masterful plot line” — Veena Das, Professor of Anthropology,
Johns Hopkins University

“Powerful work of prison literature”— Mahmood Farooqui, Hindustan Times

495.00
Quick View
Add to cart

Iran mein kuch din (Urdu) ایران میں کچھ دن

ایران ایک ایسا ملک ہے جس کا ماضی بعید بھی ہے اور قریب بھی۔ حال بھی ہے تو مستقبل بھی

120.00
Quick View
Add to cart

Iraq War: Untold story of the American invasion and Iraqi resistance

Russian Military Intelligence (GRU) reports and analyses complied by Zafarul-Islam Khan puts forth the untold story of the American invasion

75.00
Quick View
Read more

Jang-e Azadi aur Musalman (Hindi) जंगे आज़ादी और मुसलमान

ख़ालिद मोहम्मद ख़ान, नवाब सरदार दोस्त मुहम्मद ख़ान, संस्थापक रियासत भोपाल (मध्य प्रदेश) के परिवार से है। उनके द्वारा इस

375.00
Quick View
Add to cart

Karkare ke Qatil kaun? کرکرے کے قاتل کون Hindustan mein dahshatgardi ka asl chehra

 

ہندوستان میں ریاستی اور غیر ریاستی عناصر کے ذریعہ سیاسی تشدد اور دہشت گردی کی تاریخ طویل ہے۔ 1990 کی دہائی کے وسط میں ہندتوا کے عروج کے ساتھ مسلمانوں پر ’’دہشت گردی‘‘ میں ملوّث ہونے کے الزام میں شدّت آگئی اور مرکز میں اقتدار پر بی جے پی کے قبضہ کے بعد یہ الزام سرکاری نظریہ بن گیا، یہاں تک کہ ’’سیکولر‘‘ میڈیا بھی سیکیورٹی ایجنسیوں کے اسٹونوگرافر کی طرح ان کی کہانیوں کو من وعن دہرانے لگا۔ چنانچہ مسلمانوں کے ’’دہشت گرد‘‘ قرار دئے جانے کامفروضہ اس حد تک مسلمہ نظریہ بن گیا کہ بعض مسلمان بھی اس جھوٹے پروپگنڈے کو سچ سمجھنے لگے۔ ممتاز ریٹائرڈ سینئر پولس افسر ایس ۔ام۔مشرف نے ، جن کو تیلگی اسٹامپ گھوٹالے جیسے سنگین جرم کا پردہ فاش کرنے کا امتیاز حاصل ہے، پولیس ملازمت کے اپنے طویل تجربے اور عوام کی دسترس تک پہنچنے والے مواد کو استعمال کرکے اس جھوٹے پروپگنڈے کے پردے کے پیچھے کا منظر نامہ پیش کیا ہے۔ انہوں نے کچھ انتہائی چونکا دینے والے حقائق بیان کئے ہیں اور ان کے تجزیہ نے نام نہاد ’’اسلامی دہشت گردی‘‘ کے پیچھے چھپے اصل چہرے کو بے نقاب کردیا ہے۔ یہ چہرہ ان مکروہ طاقتوںکا ہے جنہوں نے مہاراشٹر پولیس کے انسداد دہشت گردی دستے کے سربراہ ہیمنت کرکر ے کو قتل کیا۔شہید کرکرے نے جواں مردی اور حق پرستی کا مظاہرے کرتے ہوئے اصل دہشت گردوں کو بے نقاب کیا تھا اور اس کی قیمت اپنی جان کا نذرانہ پیش کرکے ادا کی۔ کتاب میں دہشت گردی کے چند بڑے واقعات کا گہرائی سے جائزہ لیا گیاہے جن کو ’’ اسلامی دہشت گردی‘‘ سے منسوب کیا گیاہے اور اس مفروضے کو بے بنیاد ثابت کیا ہے۔

250.00
Quick View
Add to cart

Know the RSS: Based on Rashtriya Swayamsevak Sangh Documents

Contents: Introduction Is it true that the RSS idolizes fascism & Hitler? Is RSS loyal to National Flag? Is RSS loyal to Constitution of India? Does RSS have faith in Democracy, Secularism and Federalism? Why was RSS banned after the murder of Gandhiji? Did RSS support the Freedom Movement? Does RSS respect martyrs of the Freedom Movement like Bhagat Singh? How does non-political RSS manipulate national politics? Is BJP independent of RSS? Is RSS helping organizations like ISI? Does RSS believe in Two-Nation Theory like pre-Partition Muslim League? Endnotes

95.00
Quick View
Add to cart

Manipuri Muslims: Historical Perspectives 615-2000 CE

Manipur’s little-known Muslim communities have a long and rich history, dating from the time of Prophet Muhammad (Peace be upon him). In this exhaustive historical account, Farooque Ahmed traces the arrival of Islam in the region in 615 CE through the Prophet’s companion S’ad ibn abi Waqqas, an uncle of the Prophet, who also was instrumental in spreading Islam in China. Around the same time, an Arab Muslim family settled in the Manipur region and over the centuries Muslim traders, settlers and preachers helped the nascent community expand, flourish and thrive. These waves of migrations and local conversions coalesced into a unique identity of ‘Pangal Musalman’ reflecting the egalitarian and congregational ideals of Islam.

200.00
Quick View
Add to cart

Ram Janambhumi–Babri Masjid Ka Sach (Urdu) رام‌جنم‌بھومی- بابری‌مسجد کا سچ

جب پرسکون اجودھیا میں کچھ‌‌فرقہ‌پرست طاقتیں گنگا جمنی تہذیب کو آگ لگانے کی کوشش کرنے لگیں‌تو ایسے حالات میں شیتلا

350.00
Quick View
Add to cart

Secrets of the Kashmir Valley: My journey through the conflict between India and Pakistan

“Qazi skillfully connects us to the intense, complex and remarkably strong women of Kashmir. Their fascinating and emotionally touching stories are deeply moving and need to be heard.”
ROSS KAUFFMAN, Academy Award-winning film-maker of “Born Into Brothels”

In this timely and important book, Farhana Qazi traces the lives of women in the deeply divided Kashmir Valley and shows how they have survived a 60-plus-year conflict. With unique access, Qazi is an American storyteller who travels extensively through the region to interview mothers of martyrs, militants’ wives, prisoners, protestors, and political activists. Her evocative reporting and extensive interactions brings to life these women’s stories—their individual oral histories make up a collective chronicle of suffering and struggle.

Ultimately, this is a hopeful book. With strong voices and will power, the women of Kashmir are changing their society. These reformers are the people leading the way forward.

This crucial book on Kashmir is a brilliant and thought-provoking work. Qazi’s unique perspective on Kashmir and deep passion for the women she writes about make this a definitive account of a proud people.”

300.00
Quick View
Add to cart

Somalia: From Nation-State To Tribal Mutiny

There is a mother called Somalia. She is emotional, weeping, bleeding; humiliated by her own sons. They gang-raped her, committing

300.00
Quick View
Add to cart

The Stalwarts: Builders and leaders of Mushawarat

The All India Muslim Majlis-e Mushawarat, or Mushawarat for short, emerged half a century ago in very difficult times when communal riots had engulfed many parts of north India and some Muslims had started even leaving the country in despair. In those difficult times, some selfless leaders of the community from all over the country came together, discussed and formed a common platform for all Muslims, to think, guide and interact with the forces in society. This book sheds lights on the extraordinary lives of those stalwarts and their followers who kept the flames burning and still manage to keep that common platform intact and strong giving voice to the community nationally and internationally.

180.00
Quick View
Add to cart

Watan mein ghair وطن میں غیر : Hindustani Musalmaan (Urdu)

پانچ دہائیوں کے اپنے صحافتی کیریر کے دوران انہوں نے نہ صرف پورے ہندوستان بلکہ دنیا کے سو دیگر ملکوں کا دورہ کیا۔ زیر نظر کتاب سعید نقوی کی ۲۰۱۶ ء میں شائع ہونے والی انگریزی کتاب Being the Other کا ترجمہ ہے جو ساری دنیا میں معروف ہوئی۔ یہ ان کی ذاتی سرگزشت بھی ہے اور ان کے عہد کے اہم ترین حوادث اور سیا سی تغیرات کی تاریخ بھی۔

300.00
Quick View
Add to cart

Who Killed Karkare? The Real Face of Terrorism in India

Political violence, or terrorism, by State as well as by non- State actors has a long history in India. The allegation that sections of and individual Indian Muslims indulged in “terrorism” surfaced for the first time with the ascent of the Hindutva forces in mid-1990s and became state policy with the BJP’s coming to power at the Centre. With even “secular” media joining the role as stenographers of security agencies, this became an accepted fact so much so that common Indians and even many Muslims started believing in this false propaganda. This book, by a former senior police officer, with a distinguished career that included unearthing the Telgi scam, peeps behind the propaganda screen, using material mostly in the public domain as well as his long police experience. It comes out with some startling facts and analysis, the first of its kind, to expose the real actors behind the so-called “Islamic terrorism” in India whose greatest feat was to murder the Maharashtra ATS chief Hemant Karkare who dared to expose these forces and paid with his life for his courage and commitment to truth. While unearthing the conspiracy behind the murder of Karkare, this book takes a hard look at some of the major incidents attributed to “Islamic terrorism” in India and finds them baseless.

395.00
Quick View
Read more

Widows and Half Widows: Saga of extra-judicial arrests and killings in Kashmir

This book is about women who even after years of the disappearance of their husbands, sons and fathers are still on a daily search for their loved ones while trying to discover their own identity — are they widows or not widows. Apart from economic hardships, they have been alienated by family, society and government. Documenting their mental agony and trauma was never an easy task. This book compiles their tragedies in order to give a voice to the voiceless. Courts have failed them, successive governments have brushed aside their suffering, society has adopted an indifferent attitude and there are those who earn out of the indigence of these women.

220.00
Quick View
Read more

آپریشن اکشردھام— اکشر دھام مندر پر دہشت گردانہ حملہ Operation Akshardham (Urdu)

دنیا بھر میں ہونے والے تشدد کے بڑے واقعات میں زیادہ تر ایسے ہیں جن پر ریاستی مشینری کے تخلیق کردہ ہونے کا شبہہ گہرا ہوگیا ہے۔ راز کھلنے لگے ہیں۔ ریاستی نظام پر قابض گروہ اپنے فطری انجام کو مصنوعی واقعات سے ٹالنے کی کوشش کرتا ہے۔ وہ اکثر ایسے واقعات کے ذریعہ سماج میں مذہبی پس منظر والے افراد کے درمیان اپنی فوری ضروریات پورا کرنے والا ایک پیغام ارسال کرتا ہے۔ اسکامقصد سماجی زندگی کاتانا بانہ سنوارنا اور انسانیت نہیں ہوتی ہے۔ یہ انسانی فطرت ہے کہ اقدار و تہذیب کومستحکم کرنے کے مقصد سے زندگی گزارنے والاعام آدمی اور دانشور طبقہ اس طرح کے تمام واقعات کا تحقیقی مطالعہ کرتا ہے اور ایجاد کردہ فریب کی نفی کرنے کےلئے تاریخ کی ضرورتوں کو پوراکرتا ہے۔
بھارت میںتقریباگزشتہ تین دہائیوں کے دوران تشدد کے جو بڑے واقعات پیش آئے ہیں انکے بارے میں رائے عامہ واضح ہے۔محافظ جب قاتل ہوجاتا ہے تو عوامی زندگی بسر کرنےوالا اپنی حفاظت میں لگ جاتا ہے۔اکشر دھام واقعے کی تحقیق بے حد حقیقت پسندانہ اورمدلل انداز میں کی گئی ہے۔ پوری دنیا میں لوگوں کے خلاف چھیڑی گئی یک طرفہ جنگ کے اس باب کی یہ باریکی سے پیش کی گئی تشریح بھی ہے اورجمہوریت اور مساوات پر مبنی نظام حکمرانی کی تلاش کی طویل مدتی ضرورت کی دستاویز بھی۔
دہشت گردانہ واقعات”کیپیبیلیٹی ڈیمانسٹریشن“ اپنے تضادات کے باوجودحکمراں طبقے کے اتفاق رائے اور”فدائین“دستوں کی ایک پیکیجنگ ہے۔یہ عام نظریہ ایک شکل اختیار کررہا ہے اور وہ مستقبل میںاپنے سیاسی راستوں کی تلاش میں لگ چکا ہے۔ پنجاب میں دہشت گردی کی تحقیق نے وہاں ایک نئی طرح کی سیاسی زندگی کو جنم دیا ہے۔ یہ کتاب” مسلم دہشت گردی“ کے عنوان سے ہونے والے تمام واقعات کی ایسی ہی دستاویزی تحقیق کی ضرورت کا ایک دباﺅ بناتی ہے۔
انل چمڑیا
سینئر صحافی

250.00
Quick View
Add to cart

بارِ شناسائی – کچھ لوگ، کچھ یادیں، کچھ تذکرے – ان شخصیات کے جنہوں نے پاکستان کی تاریخ بنائی اور بگاڑی

پاکستان کے سفارت کار ہونے کے باوجود ان کے افسانے برسہابرس ہندوستان کے ممتاز رسائل و جرائد میں چھپتے رہے، خصوصاً ان کی جنم بھومی دلّی سے شائع ہونے والے ”شمع“ اور ”بیسویں صدی“ میں۔ قلم کے ناطے سے ہندوستان سے ان کا رشتہ آج بھی قائم ہے۔ اس کے باوجود کہ وہ اب شمالی امریکہ میں جا بسے ہیں، بین الاقوامی سیاست اور حالاتِ حاضرہ پر ان کے انگریزی زبان کے کالم پابندی سے ہندوستان کے مو ¿قّر اخبارات و رسائل میں چھپتے رہتے ہیں جن میں ”دی ملّی گزٹ“ اور ”دی نیو انڈین ایکسپریس“ خاص طور پر قابل ذکر ہیں۔ زیر نظر کتاب ”بارِ شناسائی“ پاکستان کے حوالے سے، اور اس کے سیاسی، سماجی اور معاشرتی تناظر میں مرتب ہونے والی تاریخ کے ضمن میں، ان مشاہدات اور تا ¿ثرات کا مجموعہ ہے جو کرامت نے ایک سفارت کار اور بیوروکریٹ کی حیثیت سے اخذ کئے۔ یہ ان شخصیات کی کردار نگاری اور خاکہ کشی ہے جنہوں نے پاکستان کی تاریخ پر گہرے نقوش چھوڑے ہیں اور جنہیں کرامت نے پاکستان میں اور بیرونِ پاکستان قریب سے دیکھا۔ یہ خاکے ایک ایسے سفارت کار کے رشحاتِ قلم ہیں جس نے بیوروکریسی کے بت کے قدموں پر نہ اپنے اندر کے انسان کو قربان کیا اور نہ ہی اس قلمکار کو بھینٹ چڑھایا جس نے اپنے قلم کی حرمت اور سچائی کا سر بلند رکھنے کا بیڑا اٹھا رکھا ہے۔

250.00
Quick View
Add to cart

بھگوا دہشت گردی اور مسلمان Bhagva dahshatgardi aur Musalmaan

اس کتاب میں بھگوادہشت گردی کو بے نقاب کرنے کے ساتھ ساتھ اس کے لازمی نتائج پیش کرنے کی کوشش کی گئی ہے اور اس بات کی وضاحت کی گئی ہے کہ کس طرح بھگوا دہشت گرد کمال عیاری سے اپنے کرتوتوں کا الزام مسلمانوں کے سرتھوپنے میں کامیاب رہے ہیں نیز کس طرح اس معاملے میں مسلمانوں کے خلاف وہ منافرت معاون ہوئی ہے جسے سنگھ پریوار برسہا برس سے فروغ دینے میں مصروف ہے۔اس کتاب میں ان سیاسی پارٹیوں کی منافقانہ روش کا بھی تذکرہ ہے جو ”سیکولر“ کہلاتی ہیں مگردانستہ یاغیردانستہ طور پر بھگوادہشت گردوں کی آلہ ¿ کار بنی ہوئی ہیں۔اس روش سے حکومتیں،انتظامیہ اور تفتیشی ایجنسیاں شدید متاثر ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ پولیس اور تفتیشی ایجنسیوں میں یہ سوچ عام ہے کہ جو بھی دہشت گردانہ وارداتیں وقوع پذیر ہوتی ہیں ان میں مسلمان ہی ملوث ہونگے۔اسی سوچ کو سنگھ پریوار فروغ دینا چاہتا ہے۔

500.00
Quick View
Read more

ستاروں سے آگے : ایک پر عزیمت خاتون کی خود نوشت داستان

پندرہ سولہ سال کی ایک نوجوان لڑکی، ہنستی کھیلتی، نوخیز جوانی کی امنگوں سے بھرپور، کھیل کود اور رقص میں حصہ لینے والی، اچانک کمر میں چوٹ لگنے کی وجہ سے پہیوں والی کرسی سے جڑ جاتی ہے۔ دوائیاں ، دعائیں، ٹونے ٹوٹکے، قدرتی علاج، آپریشن، کچھ بھی کام نہیں آیا۔ موت کی دعائیں اور خودکشی کی کوششیں بھی رائیگاں گئیں۔

مایوسی اور بے بسی کی اس اندھیری رات میں اسی کی طرح پہیوں والی کرسی سے جکڑے ایک بزرگ روشنی کی کرن بن کراس کی رہنمائی کرتے ہیں اوریوں جنم لیتی ہے ایک نئی شخصیت: نسیمہ ہُرزُک۔ اپاہجوں کے لیے بے مثال جدوجہد کرنے والی، رات کے اندھیرے میں اکےلے ہی اپاہجوں کے بدترحالات پر آنسو بہانے والی لیکن اگلی صبح کی پہلی کرن کے ساتھ ہونٹوں پر دلفریب مسکراہٹ لیے اپاہجوں کی زندگی سنوارنے کے کام میں تن من دھن سے جٹ جانے والی۔

ےہ کتاب اپاہجوں کے لیے اسکول، ہاسٹل، تربیت گاہیں اور نوکری کے ذرائع فراہم کرنے کے لیے ”ہیلپرز آف دی ہینڈیکیپڈ، کولہاپور“ نام کی تنظیم پچھلے (۷۲) سالوں سے چلا نے والی ایک قدآور شخصیت کی انتھک جدوجہد کی خودنوشت کہانی ہے۔ یہ سچی کہانی بتاتی ہے کہ ہمت اور عزم کے ساتھ کسی بھی مشکل کو آسان کیا جاسکتا ہے۔

150.00
Quick View
Add to cart

قيدى نمبر100: بھارتی زنداں کے شب و روز

بھارتی تعذیب خانوںمیں بیتے روح فرسا لمحات کی روداد قلمبند کرنا میرے لئے آسان نہ تھا۔ ہر لمحہ جب بھی میں قلم ہاتھ میں لے کر لکھنے بیٹھتی تو جیل کی تاریک زندگی کے اذیت ناک مناظر کے ہوش ربا نقوش ذہن کے پردے پر تازہ ہوکر مجھے بے چین و بے قرار کر دیتے اور میں سخت ذہنی تناو¿ میں مبتلا ہوجاتی۔ پھر بہت دیر تک اسی حالت میں پڑی رہتی۔ بڑی مشکل سے سنبھل کر پھر لکھنا شروع کر دیتی، مگر لہو لہان یادوں کا ہجوم نمودار ہوتے ہی پھر ذہنی تناو¿ مجھے گھیر لیتا۔ یہ سلسلہ کتاب کی تخلیق کے پورے عمل کے دوران جاری رہا۔
رہائی پانے کے بعد سے میں بے خوابی کی بیماری میں مبتلا ہوں۔ نیند کی دوا کھائے بغیر مجھے نیند نہیں آتی ہے۔ رات رات بھر جاگتی رہتی ہوں۔گھٹن بھرے خواب اب بھی مجھے ستاتے ہیں ۔ خواب میں میں جیل، جیل کی سلاخیں، جیل کا اسٹاف اور جیل کا پرتناو¿ ماحول دیکھتی ہوں۔ ابھی بھی جب شام کے چھ بجتے ہیں تو ایک خوف سا طاری ہو جاتا ہے۔ چھ بجے کے بعد گھر سے باہر نکلنا مجھے عجیب سا لگتا ہے، کیونکہ شام کے چھ بجے جیل کی گنتی بند ہو جاتی تھی اور اس عادت نے میرے ذہن کو مقفل کر دیا ہے۔ اب بظاہر میں آزاد دنیا میں ہوں مگر ابھی بھی بنا ہاتھ پکڑے میں سڑک پر اطمینان سے نہیں چل سکتی ہوں کیونکہ پانچ سال تک پولیس والے میرا ہاتھ پکڑے مجھے تہاڑ جیل سے عدالت اور عدالت سے تہاڑ تک لے جایا کرتے تھے ۔ اس عادت نے میرے ذہن میں وہ نقوش چھوڑے ہیں جن کا مٹنا مشکل ہے۔
— اس کتاب سے ایک اقتباس

انجم زمرد حبیب

200.00
Quick View
Add to cart

گجرات فائلس Gujarat Files (Urdu)

Urdu Edition of Gujarat Files:Anatomy of a Cover Up is a book about the 2002 Gujarat riots authored by journalist Rana Ayyub. The book is dedicated to Shahid Azmi along with advocate and activist Mukul Sinha.

260.00
Quick View
Read more